Friday, May 22, 2020

بجٹ 2020-21 کی بڑی خبر سرکاری ملازمین کے لیے علمی لاگ کی طرف سے

0 comments

تو ناطرین کل بات کی گئی تھی کہ ایڈہاک ریلیف الاونس میں 10 فیصد اضافہ کی تجویز ہے جس سے سرکاری ملازمین میں سخت مایوسی چھا گئی تھی کیو نکہ اس مہنگائی کے دور میں اگر 10 فیصد ایڈہاک ریلیف دیا جاتا ہے تو وہ انتہائی کم ہے اس سے پہلے بہت سی اچھی تجاویز بھی گورنمنٹ کی طرف سے سامنے آتی رہی ہیں اسی لیے اس خبر کو سن کر سخت مایوسی کا اظہار کیا گیا۔ لیکن اب اچھی خبر یہ ہے کہ جیسا کہ ناظریں اس بات سے آپ بخوبی آگاہ ہیں کہ کے پی کے اور پنجاب میں پی ٹی آئی کی حکومت ہے اور بلوچستان میں بھی مختلف پارٹیوں کی مخلوط حکومت ہے لیکن صرف سندھ میں پی پی پی کی حکومت ہے اس لیے اب یہ جو مختلف تجاویز سامنے آ رہی ہیں اس بارے میں یہی کہا جا رہا ہے کہ وفاق جو فیصلہ کرے گا صوبے اس چیز کو فالو کریں گے صرف سندھ گورنمنٹ کا فیصلہ وفاق سے الگ ہونے کی توقع کی جا سکتی ہے اس حوالے سے آپ کو بتا تا چلوں کہ کل جو خبر آئی تھی وہ پنجاب حکومت کی طرف سے کی گئی تھی جب کہ اب مصدقہ ذرئع کا کہنا ہے کہ جب یہ بات فنانس ڈیپارٹمنٹ سے پوچھی گئی کہ اس سال معاشی حالات صحیح نہ ہونے کی وجہ سے زیادہ اضافہ نہیں ہو گا اور 10 فیصد ایڈہاک ریلیف کی نوید سنائی جا رہی ہے تو اس پر ان کا یہی کہنا تھا کہ اس بارے میں حتمی فیصلہ فیڈرل گورنمنٹ کا ہو گا اور صوبے اس کے مطابق ہی تنخواہ اور پنشن میں اضافہ کا فیصلہ کریں گے۔


اس کے علاوہ تنخواہ اور پنشن میں اضافہ کے حوالے سے 10٪ سے لے کر 50٪ تک اضافہ کے علاوہ سکیل ریوائز کی بھی بات کی جارہی ہے۔ اور ملازمین کے مطالبات ہیں جیسا کہ ویڈیو کے شروع میں آپ کو آگاہ کر چکا ہوں کہ ملازمین موجودہ ہاوس رینٹ الاونس ور میڈیکل الاونس سے بھی خوش نہیں ہیں تو اس لیے ان تمام تجاویز پر حکومت کو غور کرنا پڑے گا کیونکہ آجکل ملازمین کی تنظیم بہت ایکٹو ہے اور وہ اپنے مطالبات کی منظوری کے لیے مختلف بڑے ٹی وی چینلز پہ انٹر ویو دے رہے ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ زر مبادلہ کے ذخائر میں خاطر خواہ اضافہ ہو چکا ہے لیکن پھر بھی جب بات کی جائے تنخواہ اور پنشن کی تو خزانہ خالی ہونے کا جواب ملتا ہے۔


تو ناظرین جیسا کہ آپ سب جانتے ہیں کہ ہمارے وزیر اعظم عمران خان کی آیڈیل حکومت مدینہ کی حکومت ہے اور یہ سب سے پہلے لیڈر جن کو ایسی باتیں کرتے سنا گیا اور بہت سراہا جاتا ہے اور اس کو سراہا جانا بھی چاہیے کیونکہ بہت کم لیڈر ہیں جو ایسی باتیں کرتے ہیں لیکن انتہائی افسوس سے یہ بات کر رہا ہوں کہ اس پہ عمل دیکھنے میں نہیں مل رہا اب ایک بات کو ہی لے لیتے ہیں کہ آنے والا بجٹ جو کہ جون میں پیش کیا جارہا ہے اور اس میں تنخواہ اور پنشن میں اضافہ کی باتیں تو ہو رہی ہیں اسی لیے ہم ایک واقعہ جو ریاست مدینہ کا ہے اس میں کمی بیشی اللہ تعالیٰ معاف فرمائے تو حضرت ابو بکر صدیق جب خلیفہ بنے اور اپنی گزر بسر کے لیے کام پر جانے لگے تو حضرت عمر رض نے فرمایا کہ آپ کدھر جارہے ہیں تو ابو بکر صدیق نے کہا کہ میں کام پر جا رہا ہوں تو اس پر حضرت عمر کا کہنا تھا کہ اگر آپ کام پر چلے گئے تو حکومتی امور کون سر انجام دے گا اس پر غور و فکر کر نے کے بعد اس وقت کی شورٰی نے ان کی تنخواہ مقرر کرنے کے لیے کہا اب تنخواہ کتنی مقرر کی جائے یہ حل طلب بات تھی جس پر حضرت ابو بکر صدیق کا کہنا تھا کہ میری اجرت اتنی رکھ دو جتنی ایک مزدور کی ہوتی ہے تو اس پر سب نے کہا کہ آپ اس میں گزر بسر کیسے کریں گے تو ابو بکر صدیق کا کہنا تھا کہ اگر میری گزر بسر نہ ہو سکی تو میں سمجھوں گا کہ مزدور کی اجرت بڑھا دینی چاہیے اور میں مزدور کی اجرت بڑھا دوں گا آج کی ریاست مدینہ کی جو بات کی جاتی ہے کیا اس میں ایسا ہی ہے اور مزدور اور وزیر اعظم کی تنخواہ ایک جیسی ہے ایسا نہیں بلکہ اس میں زمین آسمان کا فرق ہے۔ اور مزدور کی تنخواہ شاید 20000 بھی نہیں بنتی جب کہ وزیر اعظم صاحب کا گزر بسر تو 2 لاکھ میں بھی نہیں ہو رہا اب اس میں بہت تزاد ہے اللہ تعالی ہمارے حکمرانوں کو باتوں پر عمل بھی کرنے کی توفیق عطا فرمائے اور اس آنے والے بجٹ میں ضرور مزدور طبقہ کو ریلیف ملنا چاہیے

Salary Increase Budget 2020-21 Relief | Ad-hoc Relief Pay and Pension | Budget 2020-21


Saturday, May 16, 2020

بجٹ 2020-21 تنخواہ اور پنشن کے بارے میں بڑی خبر

0 comments


تو ناظرین بجٹ کے حوالے سے آج بڑی خبر ہے جیسا کہ آپ جانتے ہیں کہ بجٹ جون کے پہلے ہفتہ میں پیشں ہونے جا رہا ہے۔ اس لیے اب قومی اسمبلی میں بھی اس بارے میں بات ہونا شروع ہو گئی ہے کیونکہ ملازمین کا بھی گلہ تھا کہ ہمارے نمائندے اسمبلی میں آواز بلند نہیں کرتے تو کیا بات ہوئی ہے جاننے کے لیے میرے ویڈیو کو آخر تک ضرور دیکھیے گا۔ ان باتوں کی سمری میں واضح کر دوں کہ سپیکر کے سامنے ایک اپوزیشن لیڈر کھڑے ہوئے اور انہوں نے کہا کہ اگر صدر اور وزیر اعظم کی تنخواہ بڑھ سکتی ہے تو عام ملازم کی کیو ں نہیں بڑھائی جاتی جس کا دائو لگتا ہے وہ اپنی سیلری بڑھا لیتا ہے اور جس کا داو نہ لگے اس کی نہیں بڑھائی جاتی ایک ملک میں مختلف قوانین کیوں ۔ کیوں ایک جیسا قانون نہیں کیا گروپ 1 اور گروپ 2 والے اس ملک کے شہری نہیں ان کے اخراجات نہیں ۔ تو اب آپ کو میں زیادہ انتظار نہیں کراتا  ۔ یہ سب اب آپ سنیے خود ڈیلی آج کے پلیٹ فارم سے


Thursday, May 14, 2020

بجٹ 2020-21 ملازمین کے لیے بڑی خبر تنخواہ اور پنشن میں اضافہ؟

0 comments
تو ناظرین بجٹ کے بارے میں بڑی خبر آپ کو دیتا چلوں اے آر نیوز چینل کے ایک پروگرام پاور پلے میں یہ انکشاف کیا گیا ہے کہ اس دفعہ وزارتِ خزانہ زیادہ سے زیادہ ملازمین کے لیے ریلیف فراہم کرے گا اس پروگرام میں بتا یا گیا ہے کہ پچھلے بجٹ میں بھی خاطر خواہ اضافہ نہیں ہوا تھا اور یہی کہا گیا کہ معاشی حالات درست نہ ہو نے کی وجہ سے خاطر خواہ اضافہ نہیں کیا جا سکتا۔ لہذا اس دفعہ خاطر خواہ اضافہ متوقع ہے۔ اس میں مزید بتایا گیا کہ ایڈہاک ریلیف الاونسز کو ضم کر کے اس پر 20٪ اضافہ کا بھی امکان ظاہر کیا جا رہا ہے۔ پروگرام میں بتا یا گیا کہ افراط زر اور مہنگائی کی وجہ سے سرکاری ملازم انتہائی مشکل حالات میں گزارا کر رہا ہے لہذا یہ ضروری ہے کہ ملازمین کی تنخواہ میں خاظر خواہ اضافہ کر کے ملازمین 
کے لیے اچھا خاصہ ریلیف فراہم کیا جائے۔


Sunday, March 1, 2020

پانچویں جماعت کی سکول بیسڈ اسیسمنٹ 2020 -ڈیٹ شیٹ اور رزلٹ 2020

0 comments
Class 5 SBA 2020

شیڈول کے مطابق ، پی ای سی نے ہر اسکول کے ایس آئی ایس لاگ ان سے منسلک ایک لنک کے ذریعے گریڈ 5 کے اسکول بیسڈ اسسمنٹ (ایس بی اے) کے لئے چھ مضامین کے آئٹم بینک بھیجے ہیں۔
 سات فولڈرز اور تین فائلیں۔سات فولڈرز یہ ہیں:1. رپورٹ کارڈ اور اس کے رہنما خطوط2. انگریزی آئٹم بینک اور کاغذ بنانے کے لئے ہدایات3. ریاضی کا آئٹم بینک اور کاغذ بنانے کی ہدایات4. سائنس آئٹم بینک اور کاغذات بنانے کے لئے ہدایات5. اردو آئٹم بینک اور کاغذ بنانے کی ہدایات6. اسلامیہ آئٹم بینک اور کاغذات بنانے کی ہدایات7. ایس ایس ٹی آئٹم بینک اور کاغذ بنانے کے لئے ہدایات تین فائلیں یہ ہیں:1. اردو فونٹ کے لئے پاک اردو انسٹالر سافٹ ویئر2. ایس بی اے کے لئے رہنما اصول3. ایک صفحہ جس میں ویڈیوز اور آنے والی تازہ کاریوں کا لنک موجود ہےسائنس ، ریاضی اور انگریزی کے آئٹم بینک MS ورڈ اور پی ڈی ایف فارمیٹ میں ہیں۔اردو ، اسلامیات اور ایس ایس ٹی کے آئٹم بینک ان پیج اور پی ڈی ایف فارمیٹ میں ہیں۔ایم ایس ورڈ یا کاغذات کے ان پیج فارمیٹ کا استعمال کرتے ہوئے کاغذات تعمیر کرنے کیلئے ترجیحات لیپ ٹاپ یا پی سی استعمال کریں۔آپ کی سہولت کےلیے اور ہمارے وعدے کے مطابق ، ہم نے آپ کو پی ڈی ایف فارمیٹ بھیجا ہے۔برائے مہربانی اس پیغام کو اسکولوں تک پہنچائیں۔

Thursday, February 27, 2020

پاکستان میں کورونا وائرس کی تصدیق اور تعلیمی ادارے بند کرنے کا اعلان

0 comments
پاکستان میں کورونا وائرس کی تصدیق اور تعلیمی ادارے بند کرنے کا اعلان کر دیا گیا ہے۔ ایران میں جانے والے پاکستانی زائرین کی وجہ سے تصدیق ہوئی پاکستانی حکومت
Pakistan Holiday Season 2020

پاکستان کے وزیر ظفر مرزا نے پریس کانفرنس میں یہ بتایا کہ دو آدمیوں کورونا وائرس کی تصدیق ہو چکی ہے ۔ جس کی وجہ سے احتیاطی تدابیر اختیار کرنی چاہیے۔ ان کا مزید کہنا تھا۔ کہ ان آدمیوں کا علاج جاری ہے۔

مزید پڑھیے۔ پاکستان میں تعلیمی ادارے بند


تعلیمی اداروں میں چھٹیاں۔


بلوچستان اور سندھ میں تعلیمی ادارے بند کرنے کا اعلان کر دیا گیا۔ بلوچستان میں جام کمال نے تعلیمی اداروں میں 15 مارچ تک چھٹیوں کا اعلان کیا۔ جبکہ سندھ حکومت نے بھی کورونا وائرس کے پیش نظر دو دن کی چھٹیوں کا اعلان کر دیا ہے۔ 

Tuesday, February 25, 2020

اساتذہ کی ریشنلائزیشن پالیسی 2020۔پنجاب ٹیچرز

0 comments
حکومت پنجاب نے اساتذہ کی پالیسی کو حتمی شکل دے دی ہے۔ اس پالیسی کی بنیاد پر اساتذہ کے تبادلے کیے جائیں گے۔  پالیسی کے مطابق ، صوبہ بھر کے ہر پرائمری اسکول میں کم سے کم 3 اساتذہ کو دستیاب کیا جائے۔ صوبے میں 400،000 سے زیادہ اساتذہ کی تبادلہ اور تقرری صوبے کے 48 ہزار اسکولوں میں کی جائے گی۔ مڈل اسکولوں میں ، ہر ایک حصے کے لئے کم سے کم 5 سے 7 اساتذہ کی تقرری ہوگی جس میں سے ڈرائنگ کے لئے اساتذہ لازمی ہوگا۔

یہ پالیسی ہر اساتذہ کو ایک مناسب کام کا بوجھ دینے اور ہر اسکول کے لئے قابل داخلہ اندراج کو یقینی بنانے کے لئے بنائی گئی ہے۔ لہذا اسکولوں کے فاضل عملے کی کمی سے عملے کو اسکولوں میں منتقل کیا جائے گا۔ نرسری اور کلاس 1 کے لئے ایک واحد اساتذہ کا تقرر کیا جائے گا جس میں 50 تک کا اندراج ہوگا۔

پرائمری اسکولوں کے لئے  فارمولا

ہر پرائمری اسکول میں کم از کم 03 اساتذہ
81-130
 انرولمنٹ والے اسکولوں کے لئے05 اساتذہ 
131-180
انرولمنٹ والے  اسکولوں کے 06اساتذہ 181-230  انرولمنٹ والے اسکولوں کے07 اساتذہ 231-280  انرولمنٹ والے اسکولوں کے لئے08 اساتذہ

ہائی اسکولوں کے لئے ، ایک آئی ٹی ٹیچر چار دیگر سینئر اساتذہ کے ساتھ مقرر کیا جائے گا۔ نئی پالیسی کا اعلان آج اسلام آباد میں منعقدہ ایک تقریب میں کیا جاسکتا ہے۔

اساتذہ کی تقرری کے لئے راشنلائزیشن پالیسی کی اہم خصوصیات

طلباء اساتذہ کا تناسب 1: 40A نرسری اور کلاس I کے لئے 50 تک داخلے والی کلاسوں کے لئے ایک ہی اساتذہ کا تقرر کیا جائے گا۔ کلاس VI سے VIII کے لئے 135 کے اندراج تک کے ابتدائی اسکول کو واحد سیکشن اسکول سمجھا جائے گا۔ درج ذیل عملے سے زیادہ برقرار رکھیں؛
 ایس ایس ٹی / ہیڈ ٹیچر (صرف فائل کے لئے ، اسکول) = 01EST (PET) = 01ESTs (AT / OT) = 01ESTs (سائنس / SV / انجینئر / جنرل / آرٹس) = 03 ایک ہی سیکشن اسکول میں نویں اور دسویں جماعت کے ، ایس ایس ٹی کو مندرجہ ذیل بریک اپ فراہم کیا جائے گا:
 ایس ایس ٹی (کمپیوٹر سائنس} 01 ایس ایس ٹی (سائنس / میتھ فائی / بائیو کیم) 01 ایس ایس ٹی (آرٹس / انگریزی) 
02 کم از کم ایک ایس ایس ٹی (سائنس) ہونا چاہئے ہر ایک حصے کو ہائی اسکول کو فراہم کیا جائے ۔ایک سے زیادہ سیکشن کی صورت میں ایس ایس ٹی (سائنس) کو معیار کے مطابق مہیا کیا جاسکتا ہے ۔ترجیح ہے کہ جنرل سائنس کا مضمون ایس ایس ٹی (سائنس) کے ذریعہ پڑھایا جائے جہاں کام کے بوجھ کے ساتھ مشروط ہوں۔ ایس ایس ٹی (آرٹس) کے عہدوں کو ضرورت کی بنیاد پر ایس ایس ٹی (میتھ فائی / بائیو کیم / انجیر) میں تبدیل کیا جائے گا۔ (کمپیوٹر سائنس) عقلیت پسند نہیں کیا جائے گا۔ اضافی ایس ایس ٹیز کو 45 طلباء کے فی سیکشن 11 / 2SSTs میں حساب کیا جائے گا۔ اگر اسکول کا اندراج 1000 سے زیادہ ہے تو ، پی ای ٹی کی ایک اضافی پوسٹ عقلی سیٹ فراہم کی جاسکتی ہے ہائی / ہائر سیکنڈری اسکولوں میں درج ذیل بریک اپ کے ساتھ اندراج کی بنیاد پر کلاس چہارم کے ملازمین کو برقرار رکھا جائے گا: اندراج تک داخلہ 100 زیادہ سے زیادہ 05
  : زیادہ سے زیادہ  500 تک:07 اندراج 
 تک1500: زیادہ سے زیادہ 09 اندراج
پندرہ سو زیادہ کے لیے 11 کلاس فور ہوں گے۔ 

استدلال کے تحت اساتذہ کی پالیسی کا تبادلہ

سب سے پہلے ، ان خالی آسامیوں کو جو اضافی ہیں ، ان اسکولوں میں منتقل کریں جو عملے کی کمی رکھتے ہیں ، انرولمنٹ کے نزول ترتیب میں۔ کسی عہدے کو عہدے دار کے ساتھ منتقل کرنے کی صورت میں ، عہدے کے متعلقہ زمرے میں خواہ مخلص افراد کو ترجیح دی جائے گی۔ رضامندی نہ ہونے کی صورت میں ، پوسٹ کے متعلقہ زمرہ کی سینئیرٹی کی بنیاد پر سب سے زیادہ اہم جونیئر کو پوسٹ کے ساتھ تبدیل کردیا جائے گا۔ اگر ایک ہی اسکول میں دو یا زیادہ افراد ایڈجسٹ کرنا چاہتے ہیں تو شفٹ کرنے کی صورت میں ، ان میں سے سینئر ترین کو ترجیح ملے گی۔

Sunday, January 12, 2020

آٹھویں جماعت کی ڈیٹ شیٹ سالانہ امتحان 2020 ۔ پیک امتحانات 2020

0 comments
آٹھویں جماعت کی ڈیٹ شیٹ سالانہ امتحان 2020 ۔ پیک امتحانات 2020

پنجاب ایگزامینیشن کمشن کے تحت پنجاب کے سکولوں میں 2006 سے پانچویں اور آٹھویں جماعت کے پیپر ہو رہے ہیں۔ اس سال یہ اعلان کیا گیا ہے کہ پانچویں کے بچے بہت چھوٹے ہوتے ہیں۔لہذا ان کا امتحان انٹرنل امتحان لیا جائے جس طرح دوسری کلاسز کا سالانہ امتحان سکول کے اندر لیا جاتا ہے۔ جب کہ آٹھویں جماعت کا امتحان اس سال اسی طرح لیا جائے گا جیسے دوسرے سالوں میں اس سے پہلے لیا جا چکا ہے۔ پہلے کی طرح مارکنگ کا طریقہ کار ہو گا اور ٹیچرز کو مختلف ڈیوٹیاں دی جائیں گی۔10 جنوری سے پیک کی آفیشل ویب سائٹ پر ڈیٹ شیٹ اپ لوڈ کر دی گئی ہے۔
ڈیٹ شیٹ کے مطابق بچوں کا پیپر صبح 11 بجے شروع ہوا کرے گا۔ اور یہ پیپر تقریباً دو گھنٹے تک رہے گا۔
پہلا پیپر۔
پہلا پیپر 4 فروری 2020 سے شروع ہو گا اور یہ انگریزی کا پرچہ لیا جائےگا اسی طرح ہر پیپر میں ایک دن کا وقفہ رکھا گیا ہے تا کہ بچے اچھے طریقے سے پیپر کی تیاری کر سکیں۔ پچھلے سالوں میں بھی 11 بجے سے لے کر 1 بج کر 45 منٹ تک ٹائم دیا جاتا تھا اس سال بھی اسی چیز کو مد نظر رکھا گیا ہے اور وقت اتنا ہی ڈیٹ شیٹ میں دکھایا جا رہا ہے۔
دوسرا پیپر۔
دوسرا پرچہ 6 فروری 2020 کو سائنس کا ہو گا اور یہ پیپر بھی 11 بجے سے لے کر 1:45 تک ہو گا۔
تیسرا پیپر۔
تیسرا پرچہ 8 فروری 2020 کو اردو کا رکھا گیا ہے۔
چوتھا پیپر۔
چوتھا پرچہ 10 فروری 2020 کو ریاضی کا ہو گا۔
پانچواں پیپر۔
 پانچواں پرچہ 12 فروری بروز بدھ کو لیا جاۓ گا۔اور یہ پرچہ اسلامیات کا ہو گا۔ اسلامیات کے ہر سال دو پرچے ہوتے ہیں ایک تحریری اور دوسرا ناظرہ پرچہ ہوتا ہے۔ یہ تحریری پرچہ ہوگا جب کہ ناظرہ پرچہ 13 فروری بروز جمعرات کو رکھا گیا ہے۔
چھٹا پیپر۔
چھٹا اور آخری پرچہ اسلامیات ناظرہ جس کا اوپر بھی ذکر ہو چکا ہے وہ جمعرات والے دن لیا جاۓ گا۔

pec-8th-class-date-sheet-2020
آٹھویں جماعت کی ڈیٹ شیٹ سالانہ امتحان 2020 ۔ پیک امتحانات 2020